https://www.rayznewstv.com/

Share the Love


اسلام آباد: وفاقی حکومت نے آئندہ مالی سال 2021-22 کے بجٹ میں خالص ٹیکس وصولیوں کا ہدف 5829 ارب روپے مقرر کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق وفاقی حکومت نے آئندہ مالی سال 2021-22 کے وفاقی بجٹ میں خالص ٹیکس وصولیوں کا ہدف 24 فیصد گروتھ کے ساتھ 5829 ارب روپے مقرر کرنے کا فیصلہ کیا ہے، جس میں سے براہ راست ٹیکس(انکم ٹیکس)وصولیوں کا ہدف 2182 ارب روپے اور ان ڈائریکٹ ٹیکسوں میں سے سیلز ٹیکس کی مد میں وصولیوں کا ہدف 2506 ارب روپے، فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں وصولیوں کا ہدف 356 ارب روپے جب کہ کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں وصولیوں کا ہدف 785 ارب روپے مقرر کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔


 
ایکسپریس کو دستیاب دستاویز کے مطابق آئندہ مالی سال 2021-22 کے وفاقی بجٹ میں انکم ٹیکس وصولیوں کیلئے گروتھ کا ہدف 22 فیصد، سیلز ٹیکس وصولیوں میں گروتھ کا ہدف 30 فیصد، فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں گروتھ کا ہدف 29 فیصد جبکہ کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں گروتھ کا ہدف 12.1 فیصد مقرر کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

 
دستاویز کے مطابق اگلے مالی سال کے وفاقی بجٹ میں سیلز ٹیکس وصولیوں کیلئے مقرر کردہ 2506 ارب روپے کا ہدف حاصل کرنے کیلئے اشیاء پر سیلز ٹیکس کی مد میں مجموعی طور پر 2503 ارب39 کروڑ روپے وصول کرنے کا ہدف مقرر کیا گیا ہے، جبکہ سروسز پر سیلز ٹیکس وصولیوں کا ہدف2 ارب61 کروڑروپے مقرر کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔


 
فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں وصولیوں کا مقرر کردہ 356 ارب روپے کا ہدف حاصل کرنے کیلئے اگلے بجٹ میں بیوریجز سیکٹر سے فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں وصولیوں کا ہدف 5 ارب 13کروڑ 50لاکھ روپے، بیوریجز کنسٹریٹ سیکٹر سے فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں وصولیوں کا ہدف 33 ارب 64 کروڑ 60 لاکھ روپے، سیمنٹ سیکٹر سے فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں وصولیوں کا ہدف ایک کھرب 2 ارب41 کروڑ 50لاکھ روپے، سگریٹ اور ٹوبیکو سیکٹر سے فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں وصولیوں کا ہدف ایک کھرب 34 ارب 54 کروڑ 10لاکھ روپے، قدرتی گیس سیکٹر سے فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں وصولیوں کا ہدف 11 ارب97 کروڑ20 لاکھ روپے مقرر کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔


 
پٹرولیم مصنوعات سے فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں وصولیوں کا ہدف 4 ارب 32 کروڑ 80لاکھ روپے، درآمدی اشیاء سے فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں وصولیوں کا ہدف 2 ارب17 کروڑ روپے، جبکہ سروسز سیکٹر سے فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں وصولیوں کا ہدف 14ارب95 کروڑ 50لاکھ روپے کی وصولیوں کا ہدف مقرر کیا گیا ہے۔

دستاویز کے مطابق کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں اگلے مالی سال کیلئے مقرر کردہ 785 ارب روپے کی وصولیوں کا ہدف حاصل کرنے کیلئے گاڑیوں کی درآمد پر کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں متوقع وصولیوں کا ہدف 102 ارب 61 کروڑ 30 لاکھ روپے، چیپٹر 27 کے تحت درآمد ہونیوالی پٹرولیم مصنوعات کی درآمد پر کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں متوقع وصولیوں کا ہدف 91 ارب 50 کروڑ روپے، آئرن اینڈ اسٹیل کی درآمد پر کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں متوقع وصولیوں کا ہدف 61 ارب 50 کروڑ 60 لاکھ روپے، مشینری اور مکینیکل ایپلائنسزکی درآمد پر کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں متوقع وصولیوں کا ہدف 43 ارب 73 کروڑ 30 لاکھ روپے، الیکٹریکل مشینری کی درآمد پر کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں متوقع وصولیوں کا ہدف 67 ارب 5 کروڑ 10 لاکھ روپے مقرر کرنے کا فیصلہ ہے۔

کھانے کے تیل (Edible oil) کی درآمد پر کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں متوقع وصولیوں کا ہدف 36 ارب 28 کروڑ 80 لاکھ روپے، پلاسٹک رال (Plastic Resins) کی درآمد پر کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں متوقع وصولیوں کا ہدف 28 ارب 79 کروڑ 90 لاکھ روپے، آئرن و اسٹیل کی مصنوعات کی درآمد پر کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں متوقع وصولیوں کا ہدف 13 ارب 90 کروڑ 50 لاکھ روپے، پیپر اور پیپر بورڈ کی درآمد پر کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں متوقع وصولیوں کا ہدف 15 ارب 97 کروڑ روپے، ٹیکسٹائل میٹریل کی درآمد پر کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں متوقع وصولیوں کا ہدف 19 ارب 79 کروڑ 10 لاکھ روپے، چائے اور کافی کی درآمد پر کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں متوقع وصولیوں کا ہدف 18 ارب 63 کروڑ 10 لاکھ روپے، آرگینک کیمکلز کی درآمد پر کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں متوقع وصولیوں کا ہدف 7 ارب 75 کروڑ 80 لاکھ روپے مقرر کئے جاسکتے ہیں۔

ڈائز اور پینٹس کی درآمد پر کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں متوقع وصولیوں کا ہدف10 ارب74 کروڑ 70لاکھ روپے،ایکسپورٹ ڈویلپمنٹ سرچارج کی مد میں متوقع وصولیوں کا ہدف 10 ارب 2 کروڑ 30 لاکھ روپے، متفرق کیمکلز مصنوعات کی درآمد پر کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں متوقع وصولیوں کا ہدف 6 ارب 86 کروڑ 10 لاکھ روپے، اسٹیپل فائبرز کی درآمد پر کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں متوقع وصولیوں کا ہدف 4 ارب 25 کروڑ 40 لاکھ روپے، جب کہ متفرق اشیاء کی درآمد پر کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں متوقع وصولیوں کا ہدف261 ارب55 کروڑ 10لاکھ روپے مقرر کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

دستاویز میں بتایا گیا ہے کہ اگلے مالی سال کے بجٹ میں کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں خام وصولیاں 793 ارب 98 کروڑ 10 لاکھ روپے متوقع ہیں، جس میں 8 ارب 98 کروڑ 10 لاکھ روپے ریفنڈ اور ری بیٹ کی مد میں ادا کئے جائیں گے، جس کے بعد کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں خالص وصولیاں 785 ارب روپے ہوں گی۔

دستاویز کے مطابق اگلے مالی سال کے وفاقی بجٹ میں ورکر ویلفئیر فنڈ (ڈبلیو ڈبلیو ایف) کی مد میں 8 ارب 5 کروڑ 40 لاکھ روپے، ورکر پرافٹ شراکتداری فنڈ (ڈبلیو پی پی ایف) کی مد میں وصولیوں کا ہدف 1 ارب 54 کروڑ 50 لاکھ روپے، جبکہ کیپٹل ویلیو ٹیکس (سی وی ٹی) کی مد میں وصولیوں کا ہدف 56 کروڑ 20 لاکھ روپے مقرر کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

 

ISLAMABAD: The federal government has decided to set a net tax collection target of Rs 5829 billion in the budget for the next financial year 2021-22.

According to Express News, the federal government has decided to set a net tax collection target of Rs 5,829 billion with 24% growth in the federal budget for the next financial year 2021-22, of which direct tax (income tax) collections target. 2182 billion and out of these direct taxes, the target for sales tax collection is Rs. 2506 billion, the target for federal excise duty is Rs. 356 billion and the target for customs duty is Rs. 785 billion. What is it.


 
According to a document available to Express, the federal budget for the next financial year 2021-22 has a growth target of 22% for income tax collections, 30% for sales tax collections, 29% for federal excise duty and 29% for customs duties. It has decided to set a growth target of 12.1%.

 
According to the document, the federal budget for the next financial year has set a target of Rs 2503.39 billion in terms of sales tax on goods to achieve the target of Rs 2506 billion set for sales tax collections. It has decided to set a target of Rs 2.61 billion for sales tax collections.


 
In order to achieve the target of Rs. 356 billion in federal excise duty, the next budget has set a target of Rs. 5 billion 135 million in federal excise duty and Rs. 353 billion in federal excise duty. Target of Rs. 33.64 billion, Federal Excise Duty Receipts from Cement Sector Rs. 1.241 billion, Cigarette and Tobacco Sector Receipts from Federal Excise Duty Rs. 134.54 billion. It has been decided to set a target of Rs. 11.97 billion for the collection of Rs. 10 lakh from the natural gas sector in terms of federal excise duty.


 
The target for federal excise duty on petroleum products is Rs. 4.32 billion, the target for federal excise duty on imported goods is Rs. 2.17 billion, while the target for services sector is Rs. 14.95 billion. A recovery target of Rs. 50 million has been set.

According to the document, in order to achieve the target of Rs 785 billion set for the next financial year in terms of customs duty, the expected collection target in terms of customs duty on import of vehicles is Rs 102.61 billion, imported under Chapter 27. Expected collection of customs duty on import of petroleum products is Rs 91.50 billion, expected collection of customs duty on import of iron and steel is Rs 61.50 billion, import of machinery and mechanical appliances. It has been decided to set a target of Rs. 43.73 billion for customs duties and Rs. 67.51 billion for customs duties on import of electrical machinery.

Expected collection of customs duty on import of edible oil is Rs. 36.28 billion, target of collection of customs duty on import of plastic resins is Rs. 28.79 billion. Rs. 13 lakh 90 crore 50 lakh target for customs duty on import of iron and steel products, Rs. 15 billion 97 crore for customs duty on import of paper and paper board. Expected collection of customs duty on imports of textile materials is Rs. 19.79 billion, expected collection in terms of customs duty on import of tea and coffee is Rs. 18.63 billion, import of organic chemicals. The expected collection target in terms of customs duty can be set at Rs. 7.75 billion.

Expected collection of customs duty on import of dyes and paints is expected to be Rs. 10 billion 747 million, expected collection in terms of export development surcharge is Rs. 10 billion 23 million, expected in terms of customs duty on import of miscellaneous chemicals products. The target for receipts is Rs. 6.86 billion, the target for customs duty on import of staple fibers is Rs. 4.25 billion, while the target for customs duty on import of miscellaneous items is Rs. 261.55 billion. It has been decided to fix Rs. 10 million.

The document states that in the budget for the next financial year, crude receipts in the form of customs duty are expected to be Rs. 793.98 billion, of which Rs. 8.98 billion will be paid in the form of refunds and rebates. After which the net receipts in terms of customs duty will be Rs. 785 billion.

According to the document, the federal budget for the next financial year includes Rs 8.54 billion for the Workers Welfare Fund (WWF) and Rs 1.54 billion for the Workers Profit Partnership Fund (WPPF). Rs. 1 lakh, while the collection target for Capital Value Tax (CVT) has been fixed at Rs. 562 million.

Share the Love


Source
You Might Also Like
Comments By User
Add Your Comment
Your comment must be minimum 30 and maximum 200 charachters.
Your comment must be held for moderation.
If you are adding link in comment, Kindly add below link into your Blog/Website and add Verification Link. Else link will be removed from comment.