https://www.rayznewstv.com/

Share the Love


اسلام آباد: سپر یم کورٹ نے شہباز شریف کو بیرون ملک جانے دینے سے متعلق حکم کے خلاف اپیل پر سماعت کے دوران ریمارکس دیئے ہیں کہ بادی النظر میں حکومت نے لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے کی توہین کی۔

سپریم کورٹ کے جسٹس اعجاز الاحسن اور جسٹس سجاد علی شاہ پر مشتمل 2 رکنی بینچ نے شہباز شریف کو بیرون ملک جانے دینے سے متعلق لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف وفاقی حکومت کی اپیل پر سماعت کی۔

 
دوران سماعت جسٹس سجاد علی شاہ نے ریمارکس دیئے کہ شہباز شریف کی درخواست پر ہائی کورٹ کی 7 مئی کی مہر لگی ہے، جس پر اٹارنی جنرل خالد جاوید خان نے کہا کہ مہر کے حساب سے تو درخواست دائر بھی اسی دن ہوئی جب حکم دیا گیا۔ جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا کہ اتنی جلدی میں سارا کام کیسے ہو سکتا ہے؟ انتہائی ارجنٹ درخواست پر چیف جسٹس کی باقاعدہ تحریر ہوتی ہے۔
جسٹس سجاد علی شاہ نے ریمارکس دیئے کہ شہباز شریف نے ہائی کورٹ سے درخواست واپس لے لی ہے، درخواست واپس ہونے پر وفاق کی اپیل کیسے سنی جا سکتی ہے؟ جس پر اٹارنی جنرل نے موقف اختیار کیا کہ درخواست واپس لینے کے حکم میں بیرون ملک جانے کی اجازت دینے کا فیصلہ واپس نہیں لیا گیا، شہباز شریف کی توہین عدالت کی درخواست زیرالتواء ہے، توہین عدالت درخواست کے ذریعے بیرون ملک روانگی کے فیصلے پر عمل کرایا جا سکتاہے۔

جسٹس اعجاز الاحسن نے استفسار کیا کہ حکومتی اداروں نے لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے کیخلاف اقدام کیا، بادی النظر میں حکومت نے لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے کی توہین کی۔  اب دیکھنا یہ ہے کہ لاہورہائیکورٹ کے حکم کی توہین ہوئی یا نہیں، شہباز شریف رکن پارلیمان اور اپوزیشن لیڈر ہیں، تمام اراکین اسمبلی کا احترام ہے ، کیا شہباز شریف کو کوئی میڈیکل ایمرجنسی تھی جو اتنی جلدی سماعت ہوئی؟ جس پر اٹارنی جنرل نے کہا کہ شہباز شریف کی طبی بنیادوں پر ضمانت مسترد ہوئی تھی، ایسا کوئی ریکارڈ نہیں کہ شہباز شریف کو ایمرجنسی تھی، لاہور ہائی کورٹ نے تو وفاق کا موقف بھی نہیں سنا، بلکہ یکطرفہ حکم دے کر عملدرآمد کے لئے بھی زور دیا گیا،شہباز شریف بطور اپوزیشن لیڈر قابل احترام ہیں لیکن انصاف قانون کے مطابق ملنا چاہیے۔

اٹارنی جنرل کا موقف سننے کے بعد سپریم کورٹ نے وفاقی حکومت کی اپیل ابتدائی سماعت کے لئے منظور کر لی، سپر یم کورٹ نے شہباز شریف کی بیرون ملک روانگی کیس میں ہائیکورٹ سے ریکارڈ طلب اور مقدمے کے فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے سماعت ایک ہفتے کے لیے ملتوی کردی

ISLAMABAD: The Supreme Court (SC) while hearing an appeal against the order to allow Shahbaz Sharif to go abroad has remarked that the government in general has contempt of the decision of the Lahore High Court (LHC).

A two-member bench of the Supreme Court comprising Justice Ijaz-ul-Ahsan and Justice Sajjad Ali Shah heard the federal government's appeal against the Lahore High Court's decision to allow Shahbaz Sharif to go abroad.

 
During the hearing, Justice Sajjad Ali Shah remarked that Shahbaz Sharif's application was stamped by the High Court on May 7, to which Attorney General Khalid Javed Khan said that the application was filed on the same day as the order was issued. ۔ Justice Ijaz-ul-Ahsan said that how can all the work be done in such a hurry? The urgent request is regularly written by the Chief Justice.
Justice Sajjad Ali Shah remarked that Shahbaz Sharif has withdrawn the petition from the High Court. How can the appeal of the federation be heard if the petition is withdrawn? On which the Attorney General took the position that the decision to allow him to go abroad was not withdrawn in the order to withdraw the petition, Shahbaz Sharif's contempt of court petition is pending, following the decision to go abroad through contempt of court application. Can be done.

Justice Ejaz-ul-Ahsan inquired that the government agencies had taken action against the decision of the Lahore High Court. In general, the government had insulted the decision of the Lahore High Court. Now it remains to be seen whether the order of the Lahore High Court was disobeyed or not. Shahbaz Sharif is a Member of Parliament and Leader of the Opposition. All members of the Assembly are respected. Did Shahbaz Sharif have a medical emergency which was heard so quickly? On which the Attorney General said that the bail of Shahbaz Sharif was denied on medical grounds, there is no record that Shahbaz Sharif had an emergency, the Lahore High Court did not even hear the position of the federation, but also for execution by issuing a unilateral order. It was emphasized that Shahbaz Sharif is respected as the Leader of the Opposition but justice should be done according to the law.

After hearing the Attorney General's position, the Supreme Court allowed the federal government's appeal for a preliminary hearing. Postponed for

Share the Love


Source
You Might Also Like
Comments By User
Add Your Comment
Your comment must be minimum 30 and maximum 200 charachters.
Your comment must be held for moderation.
If you are adding link in comment, Kindly add below link into your Blog/Website and add Verification Link. Else link will be removed from comment.