https://www.rayznewstv.com/

Share the Love


لاہور: ریڈ لسٹ میں ہونے کے باوجود پاکستان اور بھارت کی ٹیموں کو انگلینڈ میں داخلے کا پروانہ مل گیا۔

پاکستان ٹیم کو جولائی میں دورئہ انگلینڈ کے دوران3ون ڈے اور اتنے ہی ٹی ٹوئنٹی میچز کھیلنا ہیں،بھارتی ٹیم جون میں آئی سی سی ٹیسٹ چیمپئن شپ فائنل اور اگست ستمبر میں میزبان ٹیم کیخلاف 5ٹیسٹ میچز میں حصہ لے گی۔ 

کورونا وائرس کی موجودہ صورتحال کے پیش نظر انگلینڈ نے پاکستان اور بھارت کو ریڈ لسٹ میں شامل کرتے ہوئے سفری پابندیاں عائد کررکھی ہیں،البتہ اب برطانوی حکومت نے خصوصی رعایت برتتے ہوئے دونوں ملکوں کی کرکٹ ٹیموں کو آنے کی اجازت دے دی ہے۔
پاکستان اور بھارت کے اسکواڈز اپنے شیڈول کے مطابق انگلینڈ پہنچیں گے، انھیں قرنطینہ کیلیے سرکاری طور پر مختص کسی مرکز میں رکھنے کے بجائے ساؤتھمپٹن کے ایجز باؤل میں ہی واقع ہوٹل میں قیام کی اجازت دی جائے گی،اس دوران کورونا ٹیسٹنگ کا سلسلہ جاری رہے گا۔

ہوٹل میں قیام سے متعلق پالیسی کا اطلاق صرف کرکٹرز اور معان اسٹاف ارکان پر ہوگا، فیملیز کو یہ سہولت حاصل نہیں ہوگی،البتہ اس ضمن میں کوئی حتمی پروٹوکول بنانے کیلیے بات چیت چل رہی ہے۔ حالات بہتر ہونے پر اہل خانہ کو ساتھ رکھنے کے حوالے کوئی رعایت دینا ممکن ہوگا۔

دوسری جانب دی ہنڈرڈ لیگ میں شرکت کیلیے آنے والے پاکستانی، بھارتی اور جنوبی افریقی کرکٹرز کے حوالے سے برطانوی حکومت کی کوئی پالیسی واضح نہیں۔

یاد رہے کہ کورونا خطرات کے باوجود انگلش ٹیم کو بھرپور ہوم سیزن میسر آرہا ہے، پاکستان اور بھارت سے قبل نیوزی لینڈ سے ہوم ٹیسٹ سیریز 2جون سے شروع ہوگی،سری لنکا سے وائٹ بال میچز جون کے آخر اور جولائی کے آغاز میں شیڈول ہیں۔

پاکستان ٹیم کو جولائی میں دورئہ انگلینڈ کے دوران3ون ڈے اور اتنے ہی ٹی ٹوئنٹی میچز کھیلنا ہیں،بھارتی ٹیم جون میں آئی سی سی ٹیسٹ چیمپئن شپ فائنل اور اگست ستمبر میں میزبان ٹیم کیخلاف 5ٹیسٹ میچز میں حصہ لے گی۔


 
کورونا وائرس کی موجودہ صورتحال کے پیش نظر انگلینڈ نے پاکستان اور بھارت کو ریڈ لسٹ میں شامل کرتے ہوئے سفری پابندیاں عائد کررکھی ہیں،البتہ اب برطانوی حکومت نے خصوصی رعایت برتتے ہوئے دونوں ملکوں کی کرکٹ ٹیموں کو آنے کی اجازت دے دی ہے۔
پاکستان اور بھارت کے اسکواڈز اپنے شیڈول کے مطابق انگلینڈ پہنچیں گے، انھیں قرنطینہ کیلیے سرکاری طور پر مختص کسی مرکز میں رکھنے کے بجائے ساؤتھمپٹن کے ایجز باؤل میں ہی واقع ہوٹل میں قیام کی اجازت دی جائے گی،اس دوران کورونا ٹیسٹنگ کا سلسلہ جاری رہے گا۔

ہوٹل میں قیام سے متعلق پالیسی کا اطلاق صرف کرکٹرز اور معان اسٹاف ارکان پر ہوگا، فیملیز کو یہ سہولت حاصل نہیں ہوگی،البتہ اس ضمن میں کوئی حتمی پروٹوکول بنانے کیلیے بات چیت چل رہی ہے۔ حالات بہتر ہونے پر اہل خانہ کو ساتھ رکھنے کے حوالے کوئی رعایت دینا ممکن ہوگا۔

دوسری جانب دی ہنڈرڈ لیگ میں شرکت کیلیے آنے والے پاکستانی، بھارتی اور جنوبی افریقی کرکٹرز کے حوالے سے برطانوی حکومت کی کوئی پالیسی واضح نہیں۔

یاد رہے کہ کورونا خطرات کے باوجود انگلش ٹیم کو بھرپور ہوم سیزن میسر آرہا ہے، پاکستان اور بھارت سے قبل نیوزی لینڈ سے ہوم ٹیسٹ سیریز 2جون سے شروع ہوگی،سری لنکا سے وائٹ بال میچز جون کے آخر اور جولائی کے آغاز میں شیڈول ہیں۔

 

 

Lahore: Despite being on the red list, Pakistan and India teams got permission to enter England.

The Pakistan team is scheduled to play three ODIs and the same number of T20 matches during the tour of England in July. The Indian team will play in the ICC Test Championship final in June and five Test matches against the hosts in August-September.

In view of the current situation of corona virus, England has included Pakistan and India in the red list and imposed travel bans, but now the British government has allowed the cricket teams of both the countries to come with special concessions.
Pakistan and India squads will arrive in England as per their schedule, they will be allowed to stay in a hotel located in Southampton's Ages Bowl instead of being kept in an official quarantine center, meanwhile corona testing will continue. Will

The hotel stay policy will only apply to cricketers and support staff, families will not have this facility, although talks are underway to formulate a final protocol in this regard. It will be possible to make some concessions to keep the family together when the situation improves.

On the other hand, the British government's policy regarding Pakistani, Indian and South African cricketers coming to participate in The Hundred League is not clear.

It may be recalled that despite the Corona threats, the English team is getting a full home season. Before Pakistan and India, the home Test series against New Zealand will start on June 2, while white ball matches against Sri Lanka are scheduled in late June and early July.

The Pakistan team is scheduled to play three ODIs and the same number of T20 matches during the tour of England in July. The Indian team will play in the ICC Test Championship final in June and five Test matches against the hosts in August-September.


 
In view of the current situation of corona virus, England has included Pakistan and India in the red list and imposed travel bans, but now the British government has allowed the cricket teams of both the countries to come with special concessions.
Pakistan and India squads will arrive in England as per their schedule, they will be allowed to stay in a hotel located in Southampton's Ages Bowl instead of being kept in an official quarantine center, meanwhile corona testing will continue. Will

The hotel stay policy will only apply to cricketers and support staff, families will not have this facility, although talks are underway to formulate a final protocol in this regard. It will be possible to make some concessions to keep the family together when the situation improves.

On the other hand, the British government's policy regarding Pakistani, Indian and South African cricketers coming to participate in The Hundred League is not clear.

It may be recalled that despite the Corona threats, the English team is getting a full home season. Before Pakistan and India, the home Test series against New Zealand will start on June 2, while white ball matches against Sri Lanka are scheduled in late June and early July.

Share the Love


Source
You Might Also Like
Comments By User
Add Your Comment
Your comment must be minimum 30 and maximum 200 charachters.
Your comment must be held for moderation.
If you are adding link in comment, Kindly add below link into your Blog/Website and add Verification Link. Else link will be removed from comment.