https://www.rayznewstv.com/

Share the Love


کراچی: اداکار عدنان صدیقی مظلوم فلسطینی بچی کی فریاد سن کر آبدیدہ ہوگئے اور فلسطین میں اسرائیلی مظالم پر دنیا کی خاموشی پر چلا اٹھے۔

فلسطین میں اسرائیلی فوج کی جارحیت اور ظلم کے خلاف دنیا بھر کی مشہور شخصیات آواز اٹھارہی ہیں لیکن طاقتور ممالک کی فلسطین میں اسرائیل کی جانب سے برپا کیے جانے والے انسانیت سوز مظالم پر پراسرار خاموشی نے پاکستانی فنکاروں کو تشویش میں مبتلا کردیا ہے۔


 
عدنان صدیقی بھی فلسطین میں معصوم بچوں اور لوگوں پر ہونے والے مظالم پر خاموش نہ رہ سکے۔ انہوں نے شہر میں جاری بمباری سے خوفزدہ ایک فلسطینی بچی کی ویڈیو شیئر کرائی ہے۔ ویڈیو میں بچی ایک ٹی وی چینل کو انٹرویو دے رہی ہے اور اس کے پس منظر میں اسرائیلی بمباری سے تباہ ہونے والی املاک نہایت خوفناک منظر پیش کررہی ہیں۔ بچی کہتی ہوئی نظر آرہی ہے  کہ وہ ابھی صرف دس سال کی ہے اور ڈاکٹر بننا چاہتی ہے لیکن اسے سمجھ نہیں آرہا کہ وہ فلسطین کی موجودہ صورتحال میں کیا کرے۔

 

عدنان صدیقی نے اس ویڈیو کو شیئر کراتے ہوئے کہا ’’جب اس نے کہا میں صرف بچی ہوں‘‘ اس جملے سے میرے اندر کچھ مرگیا۔ یہ بچی اس خوفزدہ اور آنسوؤں بھرے ماحول میں بڑھنے کی مستحق نہیں ہے۔ یہ صدمے کی کیفیت میں ہے، اس کی آنکھیں سب کچھ بول رہی ہیں۔

عدنان صدیقی نے مزید لکھا اس میں تعجب کی بات نہیں کہ یہ بڑی ہوکر ڈاکٹر بننا چاہتی ہے کیونکہ شاید اس کی نظر میں یہی وہ واحد راستہ ہے جس سے وہ اپنے لوگوں کی مدد کرسکتی ہے۔ عدنان صدیقی نے اقوام متحدہ سے سوال کرتے ہوئے کہا کیوں انسانی حقوق کا چیمپئن اقوام متحدہ خاموش ہے؟ دنیا میں یہ بے حسی کیوں ہے؟ کیا کاروباری مفادات اور ڈپلومیسی  ان بچوں کے مستقبل سے زیادہ اہم ہیں؟ آپ کو ان بچوں کا درد محسوس کرنے کے لیے ان کا والدین ہونے کی ضرورت نہیں بلکہ آپ کو صرف انسان ہونا ضروری ہے۔

عدنان صدیقی نے مزید کہا اسرائیل بے رحمی کے ساتھ اپنے ’’دفاع کے حق‘‘ پر زور دیتا ہے جب کہ وہ انسانیت کے خلاف جرائم کا مرتکب ہورہا ہے۔ گھروں اور عبادت گاہوں پر بمباری کررہا ہے اور لوگوں کو قتل کررہا ہے، عدم استحکام پھیلارہا ہے اور اپنے اس عمل کا جواز بھی پیش کررہا ہے۔‘‘

 

KARACHI: Actor Adnan Siddiqui was shocked to hear the cry of an oppressed Palestinian girl and went on to silence the world over Israeli atrocities in Palestine.

Celebrities around the world are speaking out against the Israeli military's aggression and atrocities in Palestine, but the mysterious silence of powerful countries on Israel's inhumane atrocities in Palestine has alarmed Pakistani artists.

Adnan Siddiqui also could not remain silent on the atrocities against innocent children and people in Palestine. He shared a video of a Palestinian girl scared of the ongoing bombing in the city. In the video, the girl is giving an interview to a TV channel and in the background, the property destroyed by the Israeli bombardment is showing a very horrible scene. The girl seems to be saying that she is only ten years old and wants to become a doctor but she does not know what to do in the current situation in Palestine.

Sharing this video, Adnan Siddiqui said, "When he said I am just a girl," something died inside me with this sentence. This girl does not deserve to grow up in this scary and tearful environment. She is in shock, her eyes are talking.

Adnan Siddiqui further wrote that it is not surprising that she wants to become a doctor when she grows up because maybe in her view this is the only way she can help her people. Adnan Siddiqui asked the UN why the UN, the champion of human rights, is silent. Why in the world is this indifference? Are business interests and diplomacy more important than the future of these children? You don't have to be a parent to feel the pain of these children, you just have to be human.

Adnan Siddiqui added that Israel is ruthlessly asserting its "right to self-defense" while committing crimes against humanity. It is bombing homes and places of worship and killing people, spreading instability and justifying its actions. "

Share the Love


Source
You Might Also Like
Comments By User
Add Your Comment
Your comment must be minimum 30 and maximum 200 charachters.
Your comment must be held for moderation.
If you are adding link in comment, Kindly add below link into your Blog/Website and add Verification Link. Else link will be removed from comment.