https://www.rayznewstv.com/

Share the Love


کراچی: حکومت سندھ نے صوبے بھر میں 25 مئی کی رات 8 بجے کے بعد شہریوں کے گھروں سے غیر ضروری نکلنے پر پابندی عائد کردی۔

وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی صدارت میں کورونا وائرس کی صوبائی ٹاسک فورس کا اجلاس ہوا، جس میں کراچی سمیت صوبے بھر میں کورونا کی صورتحال کا جائزہ لیا گیا۔ وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ پورے ملک میں جتنے بھی کیسز ہیں ان کا 50 فیصد سندھ میں ہیں، مجھے ضلع شرقی اور ضلع وسطی میں ایس او پیز کی سب سے زیادہ شکایات مل رہی ہیں، کمشنر کراچی کو ہدایت کی کہ وہ شہر میں ایس او پیز پر عمل درآمد کو ہرصورت میں یقینی بنائیں، آج کے اجلاس میں محکمہ داخلہ کے لیٹر کے مطابق پابندیوں پر مکمل عمل درآمد کا طریقہ کار پر فیصلے کیے جائیں گے۔

 
اجلاس میں بریفنگ دی گئی کہ کراچی شرقی میں کیے گئے ٹیسٹ کا 21 فیصد مثبت کیسز ہیں، جنوبی میں 16 فیصد، کراچی وسطی میں 10 فیصد، حیدرآباد میں 11 فیصد، دادو 10 فیصد اور سکھر 8 فیصد کیسز ہیں۔ 23 مئی تک 261 کوویڈ مریض انتقال کر گئے ہیں، وینٹی لیٹرز پر مریضوں کی تعداد 71 ہوگئی ہے، اور آکسیجن پر 604 مریض ہیں، گزشتہ 24 گھنٹوں میں کراچی میں 90 مریض اسپتالوں میں داخل ہوئے۔
ترجمان وزیراعلیٰ ہاؤس کی جانب سے جاری بیان میں بتایا گیا ہے کہ کورونا ٹاسک فورس اجلاس میں فیصلہ ہوا کہ کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے سخت پابندیاں عائد کی جائیں گی، جس کے بعد صوبائی حکومت نے صوبے بھر میں 25 مئی کی رات 8 بجے کے بعد شہریوں کے گھروں سے غیر ضروری نکلنے پر پابندی عائد کردی ہے۔  وزیراعلیٰ سندھ  مراد علی شاہ نے آئی جی پولیس کو ہدایت جاری کی ہے کہ شہریوں کو غیر ضروری طور پر گاڑیوں میں گھومنے سے بھی روکا جائے۔ جب کہ پارکس کی لائٹس بھی مغرب کے بعد بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

محکمہ داخلہ سندھ کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق کراچی سمیت سندھ بھر میں کاروبار کے اوقات صبح 5 بجے سے شام 6 بجے ہوں گے، ڈیپارٹمنٹل اور سپر اسٹورز بھی شام 6 بجے تک کھلے رہیں گے، تاہم بیکری اور ملک شاپ رات 12 بجے تک کھلے رہیں گے، جب کہ جمعہ اور اتوار کے دن کاروبار مکمل بند رہیں گے۔

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کا کہنا ہے کہ ہم نے دو ہفتہ لگائی گئی پابندیوں پر مکمل عمل کیا تو آگے آسانی ہوگی، اس دوران میں خود جاکر تمام صورتحال دیکھوں گا، اور  اگر ان اوقات کی خلاف ورزی ہوئی تو کارروائی کروں گا، عوام نے اگر تعاون کیا تو 2 ہفتے میں کیسز کم ہوجائیں گے، جس کے بعد ہم کاروبار کھولنے کی طرف جاسکتےہیں۔

 

KARACHI: The Sindh government has imposed a ban on leaving the homes of citizens after 8 pm on May 25 across the province.

A meeting of the provincial task force on Corona virus was held under the chairmanship of Sindh Chief Minister Syed Murad Ali Shah in which the situation of Corona in the province including Karachi was reviewed. The Chief Minister Sindh said that 50% of the total number of cases in the country are in Sindh. I am receiving the highest number of complaints from SOPs in Eastern and Central Districts. Ensure implementation of PES in all cases. Today's meeting will decide on the modalities of full implementation of sanctions as per the letter of the Home Department.

 
The meeting was briefed that 21% of the cases in Karachi East are positive, 16% in South, 10% in Central Karachi, 11% in Hyderabad, 10% in Dadu and 8% in Sukkur. As of May 23, 261 patients have died, the number of patients on ventilators has risen to 71, and there are 604 patients on oxygen. In the last 24 hours, 90 patients have been admitted to hospitals in Karachi.
A statement issued by the spokesperson of the Chief Minister's House said that the Corona Task Force meeting decided that strict restrictions would be imposed to curb the spread of Corona virus, after which the provincial government on May 25 at 8 p.m. It has banned citizens from leaving their homes unnecessarily after 1 p.m. Sindh Chief Minister Murad Ali Shah has directed the IG Police to prevent citizens from moving in vehicles unnecessarily. It has also been decided to turn off the park lights after sunset.

According to the notification issued by the Sindh Home Department, business hours across Sindh, including Karachi, will be from 5 am to 6 pm, departmental and super stores will also remain open till 6 pm, however, Bakery and Malik Shop will continue till 12 pm Will be open, while business will be completely closed on Fridays and Sundays.

Sindh Chief Minister Murad Ali Shah has said that if we fully implement the ban imposed for two weeks, then it will be easier. In the meantime, I will go and see the situation myself, and if these times are violated, I will take action. If we cooperate, the cases will be reduced in 2 weeks, after which we can move towards opening a business.

Share the Love


Source
You Might Also Like
Comments By User
Add Your Comment
Your comment must be minimum 30 and maximum 200 charachters.
Your comment must be held for moderation.
If you are adding link in comment, Kindly add below link into your Blog/Website and add Verification Link. Else link will be removed from comment.