https://www.rayznewstv.com/

Share the Love


رومانیہ: سائنسدانوں کی ایک عالمی ٹیم نے دریافت کیا ہے کہ زمین پر آج سے تقریباً ایک کروڑ سال پہلے ایک اتنی بڑی جھیل بھی تھی جس کا رقبہ موجودہ بحیرہ احمر زیادہ تھا۔

سائنسدان اس جھیل کو ’’پیراٹیتھیس سی میگا لیک‘‘ کے نام سے جانتے ہیں جو غالباً زمین کی تاریخ میں سب سے بڑی جھیل رہی ہوگی۔

 
تازہ تحقیق میں برازیل، روس، رومانیہ، ہالینڈ اور جرمنی کے ماہرینِ ارضیات پر مشتمل ایک ٹیم نے پیراٹیتھیس (Paratethys) جھیل میں ہونے والی تبدیلیوں سے متعلق ارضیاتی شہادتیں یکجا کیں تاکہ وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ اس جھیل کے رقبے میں کمی بیشی کا اندازہ لگایا جاسکے۔
تمام شواہد کی روشنی میں انہیں معلوم ہوا کہ آج سے ایک کروڑ سال پہلے اس جھیل کا رقبہ سب سے زیادہ، یعنی 28 لاکھ مربع کلومیٹر تھا اور یہ (حالیہ زمانے کے) اٹلی میں ایلپس پہاڑی سلسلے سے لے کر وسط ایشیا میں قازقستان تک پھیلی ہوئی تھی۔

اگر آج زمین پر موجود تمام جھیلوں کا پانی یکجا کرلیا جائے، تب بھی پیراٹیتھیس جھیل کا پانی اس سے بھی دس گنا زیادہ رہا ہوگا۔

پیراٹیتھیس جھیل کے بارے میں ایک مفروضہ یہ بھی ہے کہ کسی زمانے میں یہ ایک سمندر تھا جو ارضیاتی اور ماحولیاتی تبدیلیوں کے باعث باقی سمندر سے بتدریج الگ ہوگیا اور اس کے ارد گرد خشکی آگئی۔

یہ بات اس لیے بھی معقول لگتی ہے کیونکہ پیراٹیتھیس جھیل کی جگہ سے کئی طرح کی سمندری جانوروں کے رکازات (فوسلز) ملے ہیں جن میں وہیل بھی شامل ہے۔

بعد ازاں اس کے رقبے میں (ایک جھیل کی حیثیت سے) کمی بیشی ہوتی رہی جو آج سے ایک کروڑ سال پہلے سب سے زیادہ ہوگیا۔

تاہم وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ اس جھیل کا رقبہ بھی کم ہوتا چلا گیا، جبکہ 79 لاکھ سے 76 لاکھ سال پہلے یہ تیزی سے خشک ہوئی اور اس کی سطح بھی 250 میٹر تک کم ہوگئی۔

نتیجتاً اس سے کئی چھوٹی بڑی جھیلیں بن گئیں جن کے درمیان وسیع اور خشک علاقہ موجود تھا۔ اس طرح پیراٹیتھیس جھیل کا خاتمہ ہوا۔

نوٹ: یہ تحقیق آن لائن ریسرچ جرنل ’’نیچر سائنٹفک رپورٹس‘‘ کے تازہ شمارے میں شائع ہوئی ہے۔

 

Romania: A global team of scientists has discovered that about 10 million years ago, there was a large lake on Earth with a larger area than the current Red Sea.

Scientists call the lake the "Parathysis C Mega Lake", which is probably the largest lake in Earth's history.

 
In a recent study, a team of geologists from Brazil, Russia, Romania, the Netherlands and Germany gathered geological evidence of changes in Lake Paratethys to estimate the lake's size over time. Can be applied
In the light of all the evidence, they found that 10 million years ago, the lake had the largest area, 2.8 million square kilometers, and that it stretched from the (recent) Alps in Italy to Kazakhstan in Central Asia. Was

If the water of all the lakes on earth today were combined, the water of Lake Parathes would have been ten times more than that.

There is also a hypothesis about Lake Paratysthes that at one time it was an ocean that gradually separated from the rest of the ocean due to geological and environmental changes and became dry around it.

This also seems plausible because fossils of a variety of marine animals, including whales, have been found on Lake Parathythmus.

Later, its area (as a lake) continued to decrease, becoming the largest 10 million years ago.

However, with the passage of time, the area of ​​this lake also decreased, while from 7.9 million to 7.6 million years ago, it dried up rapidly and its level also decreased by 250 meters.

As a result, it formed several small and large lakes with a wide and arid area between them. Thus ended Lake Parathes.

Note: This research is published in the latest issue of the online research journal Nature Scientific Reports.

Share the Love


Source
You Might Also Like
Comments By User
Add Your Comment
Your comment must be minimum 30 and maximum 200 charachters.
Your comment must be held for moderation.
If you are adding link in comment, Kindly add below link into your Blog/Website and add Verification Link. Else link will be removed from comment.