https://www.rayznewstv.com/

Share the Love


اسلام آباد: سپریم کورٹ نے این 25 ہائی وے کی خستہ حالی پر این ایچ اے کی رپورٹ مسترد کرتے ہوئے این ایچ اے سے شاہراہوں کی مرمت اور ملک بھر میں حادثات کی رپورٹس طلب کرلیں۔

چیف جسٹس کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی۔ چیف جسٹس گلزار احمد نے این ایچ اے کی کارکردگی پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ممبر پلاننگ شاہد احسان سے کہا کہ نیشنل ہائی وے اتھارٹی کو ملنے والے فنڈز کہاں جاتے ہیں، این ایچ اے کسی روڈ پر معیاری کام نہیں کر رہا، اس میں کرپشن کا بازار گرم ہے، اس کی سڑکیں بارش کے پانی سے خراب ہوجاتی ہے اور اس کی کوتاہی کی وجہ سے سڑکوں پر لوگ مر رہے ہیں۔

 
چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ ٹریفک حادثات میں ہلاک ہونے والوں کا خون این ایچ اے کے ہاتھوں پہ ہے، وہ کرپٹ ادارہ بن چکا ہے، ہائے وے کی زمینوں پرلیز کے پیٹرول پمپس، ہوٹل، دوکانیں بن گئی ہیں۔
ممبر ایڈمن این ایچ اے شاہد احسان نے جواب دیا کہ رواں سال کے آخر میں روڈز کے حالت بہتر ہو جائے گی۔ اس پر چیف جسٹس نے کہا کہ ہائے ویز کے اطراف درخت تک نہیں، این ایچ اے میں ٹھیکدار مال بنانے پر لگے ہوئے ہیں، اتھارٹی کو اتنے پیسے ملتے ہیں لیکن کس کی جیب میں جاتے ہیں پتہ نہیں، 2018 کی رپورٹ کے مطابق 12894 روڈ ایکسیڈنٹ ہوئے اور 5932 افراد جان سے گئے۔

 
جسٹس مظہر عالم میاں خیل نے بتایا کہ آج کی خبر ہے رواں سال 36000 لوگ روڈ ایکسیڈنٹس میں ہلاک ہو گئے۔ عدالت نے کیس کی سماعت غیر معینہ مدت تک ملتوی کردی۔

 

ISLAMABAD: The Supreme Court (SC) has rejected the NHA's report on the dilapidated condition of N-25 Highway and sought reports from the NHA on repair of highways and accidents across the country.

A three-member bench headed by the Chief Justice heard the case. Expressing anger over the performance of NHA, Chief Justice Gulzar Ahmed asked Member Planning Shahid Ehsan where the funds received by the National Highway Authority go, NHA is not doing standard work on any road, corruption in it. The market is hot, its roads are damaged by rain water and people are dying on the streets due to its negligence.

 
The Chief Justice remarked that the blood of those killed in traffic accidents is in the hands of NHA, it has become a corrupt institution, highway lands have become petrol pumps, hotels, shops.Member Admin NHA Shahid Ehsan replied that the condition of roads would improve by the end of this year. On this, the Chief Justice said that not even the trees along the highways, the contractors in the NHA are engaged in making goods, the authority gets so much money but it is not known in whose pocket it goes, according to the report of 2018, 12894 Road There were accidents and 5932 people died.

 
Justice Mazhar Alam Mian Khel said that today's news is that 36000 people have died in road accidents this year. The court adjourned the hearing of the case indefinitely.

Share the Love


Source
You Might Also Like
Comments By User
Add Your Comment
Your comment must be minimum 30 and maximum 200 charachters.
Your comment must be held for moderation.
If you are adding link in comment, Kindly add below link into your Blog/Website and add Verification Link. Else link will be removed from comment.